Teacher day poetry | یوم اساتذہ

Rate this post

خوش قسمت ہوتے ہیں وہ لوگ جن کی زندگی میں اچھے اساتذہ میسر آجاتے ہیں، ایک معمولی سے نوخیز طالب علم سے لے کر ایک کامیاب فرد تک سارا سفر اساتذہ کا مرہون منت ہے۔

 وہ ایک طالب علم میں جس طرح کا رنگ بھرنا چاہیں بھر سکتے ہیں۔

    اسلامی تعلیم میں اساتذہ کی عزت و تکریم کا حکم جا بجا ملتا ہے ۔ یہاں تک کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے کہ ” *مجھے معلم بنا کر معبوث کیاگیا ہے* “۔

اسلام میں علم کے حصول کے لیے کئی مقامات پر تاکید کی گئی ہے۔اساتذہ علم کے حصول کا براہ راست ذریعہ ہیں اس لیے ان کے احترام کا حکم بھی دیا گیا ہے۔

اساتذہ کا احترام اسلامی نقطہ نظر سے دو اعتبار سے بڑی اہمیت رکھتا ہے۔ایک تو وہ منبع علم ہونے کے ناطے ہمارے روحانی اساتذہ ہوتے ہیں ۔ ہماری اخلاقی اور روحانی اصلاح کے لیے اپنی زندگی صرف کرتے ہیں اور دوسرا وہ طلبہ سے بڑے ہوتے ہیں اور اسلام بڑوں کے احترام کا حکم بھی دیتا ہے۔ ایک جگہ ارشاد نبوی ہے کہ جو بڑوں کا احترام نہیں کرتا اور *چھوٹوں پر شفقت نہیں کرتا وہ ہم میں سے نہیں*

   ویسے تو مسلمان ہونے کے ناطے اور ایک مسلمان طالب علم کی حیثیت سے ہمارے لیے ہر دن اساتذہ کی عزت اور احترام کا دن ہوتا ہے لیکن بین الاقوامی سطح پر دنیا بھر میں اساتذہ کے احترام اور ان سے محبت کے اظہار کے طور پر طالب علم 5 اکتوبر کو ” *عالمی یوم اساتذہ* “ مناتے ہیں۔

ہم اس موقع پر اپنے تمام معزز اساتذہ کرام کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور دعاگو ہیں اللہ تعالیٰ ہمارے اساتذہ کرام کا سایہ ہم پر تادیر قائم و دائم فرمائے۔

آمین بجاہ النبی الکریم الامین

teacher day poetry

یہ اشعار اپنے تمام اساتذہ کرام کے نام کرتے ہیں۔

کتنی محبتوں سے پہلا سبق پڑھایا

میں کچھ نہ جانتا تھا، سب کچھ مجھے سکھایا

اَن پڑھ تھا اور جاہل ، قابل مجھے بنایا

دنیا ئے علم و دانش کا راستہ دکھایا

جینے کا فن سکھایا،مرنے کا بانکپن بھی

عزت کے گر بتائے ، رسوائی کے چلن بھی

کانٹے بھی راہ میں ہیں ،پھولوں کی انجمن بھی

تم فخرِ قوم بننا اور نازشِ وطن بھی

ہے یاد مجھ کو ان کا ایک اک کلام

جو عِلم کا عَلم ہے، استاد کی عطا ہے

ہاتھوں میں جو قلم ہے، استاد کی عطا ہے

جو فکر تازہ دم ہے، استاد کی عطا ہے

جو کچھ کیا رقم ہے، استاد کی عطا ہے

اُن کی عطا سے چمکا، نوری کا نام

📜اظہارِ تشکّر📜

حضرتِ سیِّدُنا جنید بغدادی رحمۃ اللہ علیہ کے ہاتھ میں تسبیح دیکھ کر کسی نے عرض کی:

اَنتَ مع تمکّنک و شَرفِک تاْخذُ بِیَدک سبحۃً

کہ آپ اِس قدر شرف و بزرگی کے باوجود (اب بھی) اپنے ہاتھ میں تسبیح رکھتے ہیں؟؟؟

تو آپ نے ارشاد فرمایا

 ہاں! ایک ایسا سبب جسکے ذریعے ہم ایک بلند مقام تک پہنچے:لَا نَترُکُہ ابدًاہم اس (سبب) کو کبھی نہیں چھوڑیں گے۔۔۔!!!

(المستطرف ، ص214 ، دارالمعرفۃ بیروت)

اللہ اکبر! اپنے محسِن کا احسان مند رہنا اور اسکا شکریہ ادا کرنا طبعِ سلیم کا لازمہ ہے۔

،یومِ اساتذہ،

ہماری درسگاہوں میں جو یہ اُستاد ہوتے ہیں

حقیقت میں یہی تو قوم کی بنیاد ہوتے ہیں

یہی رکھتے ہیں شہرِ علم کی ہر راہ کو روشن

ہمیں منزل پے پہنچا کر یہ کتنا شاد ہوتے ہیں

بَرَستے ہیں یہ ساوَن کی طرح پیاسی زمینوں پر

اِنہیں کے فیض سے اُجڑے چمن آباد ہوتے ہیں

اگر رُوحانیّت سے باہمی رِشتہ جُڑے واصف

تو پھر شاگرد بھی اُستاد کی اولاد ہوتے ہیں

سلام اساتذہ کرام 💌

TeachersDay2023♥️

اللہ پاک میرے تمام اساتذہ کرام کو صحت و تندرستی والی لمبی عمر عطا فرمائے آمین یارب العالمین ❤️❤️

اور استاذی امام المناظرین رحمۃ اللہ علیہ کی قبر مبارک پر اپنی کروڑوں رحمتوں اور برکتوں کا نزول فرمائے ۔ آمین بجاہ سید المرسلین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ۔

  ✍️ابو الحسن محمد افضال حسین نقشبندی مجددی ۔

(٥/١٠/٢٠٢٣)

یوم اساتذہ 

استاذ وہ شمعِ ہے جو خود جل کر دوسروں کو روشنی دیتا ہے ۔

استاد ایک چراغ ہے جو تاریک کے راستوں میں روشنی کو برقرار رکھتا ہے۔استاذ ایک ایسا پھول جس کی خوشبوں سے معاشرے میں امن ، دوستی اور بھائی چارے کا پیغام دیتا ہے ۔ماں اور باپ کا کردار اہم ہوتا ہے کیونکہ وہ اپنی اولاد کی جسمانی طور پر صحت اور اس کے نشوونما کا خیال رکھتے ہیں ٹھیک اس طرح استاد اپنے شاگردوں کی روحانی تربیت انتظام اور احترام کرتا ہے ۔

ہمیں چاہیے اپنے اساتذہ سے عزت و احترام کے ساتھ پیش آئے ۔ آن کا ادب کرے کیوں یہی ہمارے قوموں کے ہیرو ہوتے ہیں

آج 5اکتوبر یعنی استاتذہ کا عالمی دن ہے میں آن تمام اساتذہ کرام کو سلام پیش کرتا ہوں جو اپنا فرض ایمانداری سے نبھا رہے ہیں ۔

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment