Surah baqarah last 2 ayat benefits With Ayat kursi transliteration

Rate this post

INTRODUCTION

Lesson from the Quran Summary of Surah Al Baqarah, Verse 34 – Verse of the Throne (Ayat al-Kursi) and the Command to Spend in the Way of Allah

Surah baqarah ayat kursi

In surah baqarah Ayat al-Kursi, Allah’s divinity and His Oneness are described. The essence of this verse is that Allah is the Necessary Existence, the Creator of the universe, and the One who plans and manages everything. Sleep and fatigue do not affect Him because these are imperfections, and Allah is free from any imperfections. He is the owner of everything in the heavens and the earth, and His command prevails over all creation. Therefore, when the entire universe belongs to Him, who can be His partner? Yet, the polytheists worship stars and the sun in the heavens or rivers, mountains, stones, trees, animals, fire, and so on, which are on the earth. So how can these things be worthy of worship when everything in the heavens and the earth belongs to Allah?

ayat kursi transliteration
surah baqarah last 2 ayat benefits

The polytheists, who believe that idols can intercede for them, should know that there is no intercession for the disbelievers. In the presence of Allah, only those who have been granted permission can intercede: the Prophets, the angels, the close servants of Allah, the righteous, and the believers. Allah has knowledge of everything, whether it is related to people of the past or the future, worldly matters, or matters of the Hereafter. No one can gain knowledge except through His will. Personal knowledge belongs to Him, and He bestows it upon whomever He wills, such as revealing the secrets of the universe to His chosen Prophets and Messengers.

 

The greatness of Allah is limitless. In the Hadith, it is mentioned that whoever recites Ayat al-Kursi before going to sleep, Allah will protect them until the morning, and Satan will not come near them. The recitation of Ayat al-Kursi after prayers brings the glad tidings of Paradise. Reciting it before sleeping protects one’s home and their neighbors’ homes from harm.

 

Then Allah said, “Remember when the truth was revealed and falsehood was exposed, and the truth overcame.” The reality has become clear, and there is a clear distinction between truth and falsehood. Whoever seeks the support of the Lord and denies the worship of others will never be harmed. Allah is the friend of the believers. He brings them out of darkness into light. The disbelievers have the support of the devils, who continually lead them from light into darkness. Eternal hellfire is their destiny.

(درس قرآن)

سورہ آلبقرہ رکوع نمبر 34 کا خلاصہ

آیت الکرسی اور اللہ کی راہ میں خرچ کرنے کا حکم

 آیت الکرسی میں اللہ تعالیٰ کی اُلُوہِیَّت اور اس کی توحید کا بیان ہے اس کا خلاصہ یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ واجبُ الوجود اور عالَم کو ایجاد کرنے اور تدبیر فرمانے والا ہے، اسے نہ نیند آتی ہے اور نہ اونگھ کیونکہ یہ چیزیں عیب ہیں اور اللہ تعالیٰ نَقص و عیب سے پاک ہے۔ آسمانوں اور زمین میں موجود ہرچیز کا وہی مالک ہے اور ساری کائنات میں اسی کا حکم چلتا ہے تو جب سارا جہان اس کی ملک ہے تو کون اس کا شریک ہوسکتا ہے، مشرکین یا تو ستاروں اور سورج کو پوجتے ہیں جو آسمانوں میں ہیں یا دریاؤں ، پہاڑوں ، پتھروں ، درختوں ، جانوروں ، آگ وغیرہ کی پوجا کرتے ہیں جو زمین میں ہیں توجب آسمان و زمین کی ہر چیزاللہ تعالیٰ کی مِلک ہے تو یہ چیزیں کیسے پوجنے کے قابل ہوسکتی ہیں اور مشرکین جو یہ گمان کرتے ہیں کہ بُت شفاعت کریں گے تو وہ جان لیں کہ کفار کے لیے کوئی شفاعت نہیں۔ اللہتعالیٰ کے حضور اجازت یافتگان حضرات کے سوا کوئی شفاعت نہیں کرسکتا اور اجازت والے حضرات انبیاء کرام عَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام ملائکہ عَلَیْہِمُ السَّلَام ، اولیاء رَحْمَۃُاللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِم اور مؤمنین ہیں۔ اللہ تعالیٰ ہر چیز کا علم رکھتا ہے خواہ اس کا تعلق لوگوں سے ماقبل کا ہو یا مابعد کا ،امورِ دنیا کا ہو یا امورِ آخرت کا۔ اللہ تعالیٰ کے علم سے کسی کو کچھ نہیں مل سکتا جب تک وہ نہ چاہے اور وہ عطا نہ فرمائے ۔ ذاتی علم اسی کا ہے اور اس کے دینے سے کسی کو عطائی علم ہوسکتا ہے جیسے وہ اپنی مَشِیَّت سے لوگوں کو اَسرار ِ کائنات پر اور انبیاء و رسل عَلَيْهِمْ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کو غیب پر مطلع فرماتا ہے ۔ اللہ تعالیٰ کی عظمت بے نہایت ہے۔(خازن) احادیث مبارکہ میں اس کے فضائل موجود ہیں کہ “جوسوتے وقت آیتُ الکرسی پڑھے تو صبح تک اللہ تعالیٰ اس کی حفاظت فرمائے گا اور شیطان ا س کے قریب نہ آسکے گا” ۔(بخاری)

نمازوں کے بعد آیتُ الکرسی پڑھنے پر جنت کی بشارت ہے۔ رات کو سوتے وقت پڑھنے پر اپنے اور پڑوسیوں کے گھروں کی حفاظت کی بشارت ہے۔(شعب الایمان،)

 پھر فرمایا یاد رکھو اب حقیقت کھل چکی ، حق اور باطل میں تمیز ہو چکی جس نے رب کا سہارا لیا ، اور رب کے سوا دوسروں کی پرستش سے انکار کیا، اس کے اعتماد کو کبھی ٹھیس نہ لگے گی ۔ اللہ ایمان والوں کا دوست ہے۔ ان کو تاریکیوں سے نکال کر روشنی میں لاتا ہے۔ کافروں کے حامی شیاطین ہیں ، جو انہیں روشنی سے تاریکیوں میں دھکیلتے رہتے ہیں ، ہمیشہ کے لئے دوزخ ان کا مقدر ہے.

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment