Milad un Nabi | میلاد النبی 12

Rate this post

میلاد کی رات کو شبِ قدر پر 19 وجہوں سے فضیلت حاصل ہے۔ مسلمان بنیں شیطان نہ بنیں(1) فضیلت رفعت و بلندی کا نام ہے اور یہ دونوں اضافی چیزیں ہیں 

کوئی بھی رات شرف و فضیلت والی تب ہوتی ہے جب اس میں شرف والی بات زیادہ ہو ہو جبکہ میلاد کی رات حضور سید عالم صلی اللہ علیہ وسلم کی وجہ سے مشرف ہے تو اس لحاظ سے میلاد کی رات افضل ہے!

(2) میلاد کی رات حضور صلی اللہ علیہ وسلم خود تشریف لائے جبکہ لیلة القدر آپ کو عطاء کی گئی ہے اور ظاہر ہے عطاء سے صاحب عطاء کی رات افضل ہے

(3) شبِ قدر شبِ میلاد کی عطاء کی ہوئی ایک خوبی ہے اگر شبِ میلاد نہ ہوتی تو شبِ قدر بھی نہ ہوتی

(4) شبِ قدر کی فضیلت و برکت اسی رات تک مخصوص اور مخصوص بندوں تک محدود ہے

جبکہ شبِ میلاد کی برکات پورے سال اور ہر انسان کو شامل ہیں

(5) شبِ قدر کو شرف نزولِ ملائکہ کی وجہ سے ملا جبکہ شبِ میلاد کو شرف امام الانبیاء صلی اللہ علیہ وسلم کی آمد کی وجہ سے ملا اور ظاہر ہے اعلی و افضل کی آمد نے اس رات کو بھی افضل بنا دیا

(6) دونوں راتیں فضل و شرف میں برابر ہیں کہ ان میں ملائکہ کا نزول ہوتا ہے مگر شبِ میلاد افضل یوں بھی ہے کہ اس میں ملائکہ کے ساتھ انبیاء کرام علیہم السلام بھی تشریف لائے تھے

(7) شبِ قدر میں فرشتے آسمان سے اترتے ہیں اور پھر واپس چلے جاتے ہیں جبکہ شبِ میلاد میج تشریف لائی نعمت زمین پر ہی ہے

(8) شبِ قدر کی فضیلت عمل کرنے کے ساتھ خاص ہے جو اس وقت عبادت و نیکی میں مشغول ہوگا وہ اسے پاسکتا ہے جبکہ شبِ میلاد کی برکات نیک و بد سب پاتے ہیں

(9) شبِ قدر کی فضیلت اس لیئے کہ یہ امتِ محمدیہ علیٰ صاحبھا الصلوۃ و السلام کو عطاء کی گئی جبکہ شبِ میلاد میں وہ خود تشریف لائے ہیں

(10) شبِ قدر کی وجہ صرف امت محمدیہ علی صاحبھا الصلوۃ و السلام کو فائدہ ہوتا ہے جبکہ شبِ میلاد کی وجہ سے تمام مخلوقات کو فائدہ ہے کیونکہ وہ رحمۃ للعالمین ہیں

(11) شبِ قدر میں رات کی اضافت قدر کی طرف ہے ہم کہتے ہیں قدر کی رات ہے جبکہ شبِ میلاد میں نسبت حضور سید عالم صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف ہے ہم کہتے ہیں شبِ میلاد النبی ہے تو اس اضافت کی وجہ سے بھی شبِ میلاد افضل ہے

(12) شبِ قدر کی منفعت اسی کو ملتی ہے جو نیکی کا عامل ہو جبکہ شبِ میلاد کا نفع متعدی ہے

(13) شبِ قدر کا فضیلت سال میں ایک بار غیر متعین رات ہے جبکہ شبِ میلاد معین رات ہے

(14) جس طرح زمین کا وہ ٹکرا جو حضور سید عالم صلی اللہ علیہ وسلم کے جسم مبارک سے مس ہے بالاجماع ساری زمیں سے افضل ہے ویسے ہی وہ وقت بھی سب وقتوں سے افضل ہے جس میں حضور سید عالم صلی اللہ علیہ وسلم کی دنیا میں تشریف آوری ہوئی

(15) شبِ قدر شبِ میلاد کی فرع ہے اور یہ واضح ہے اضل فرع سے اعلی و افضل ہوتی ہے

(16) شبِ میلاد میں فیوضاتِ الہیہ حضور سید عالم صلی اللہ علیہ وسلم کے وجود کی وجہ سے عام تھے جبکہ شبِ قدر میں فرشتوں کے وجود کی وجہ سے ہوتے ہیں اور ظاہر ہے اعلی و افضل وجود سے فیوض و برکات بھی افضل ہوتی ہیں

(17) شبِ میلاد اللہ رب العزت نے حضور صلی اللہ علیہ وسلم کا وجود ظاہر فرمایا جس سے اخروی دائمی نجات کی ضمانت ہے جس پاک وجود سے رنگِ کائنات قائم ہے جبکہ شبِ قدر میں ایسا کچھ نہیں ہے

(18) اگر شبِ میلاد کو افضل نہ مانا جائے تو یہ ماننا پڑے گا کہ ملائکہ حضور سید عالم صلی اللہ علیہ وسلم سے افضل ہیں تبھی ان کے نزول کی رات افضل ہے جبکہ یہ باطل ہے

(19) حضور سید عالم صلی اللہ علیہ وسلم نے خود فرمایا میرا زمانہ سب زمانوں سے افضل ہے تو جس کی نسبت حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف ہوگی وہ دوسری شے سے افضل ہوگا!

(ماخوذ جنی الجنتین فی شرف اللیتین للحاظ التلمسانی)

رد المحتار میں علامہ شامی نے راتوں کی افضلیت کی ترتیب یوں بیان کی ہے

سب سے افضل رات شبِ میلاد ہے پھر شبِ قدر پھر شبِ معراج پھر شبِ عرفہ پھر شبِ جمعہ پھر شب براءت پھر شبِ عید ہے

(رد المحتار جلد 3 صفحہ 604)

یہ مبارک رات مسلمان کی زندگی کی اہم ترین رات ہوتی ہے اور شیطان پر بھاری رات ہوتی ہے

لہذا اس مبارک رات کی آمد پر خوشی منا کر مسلمان ہونے کا ثبوت دیں نہ کہ منہ پھیلا کر شیطان ہونے کا ثبوت دیں!

صدیوں پہلے کے بے شمار ابلیس

عشقِ_سیدِ_عالم 

امام اجل شارح بخاری امام احمد بن محمد قسطلانی المواھب اللدنیہ میں فرماتے ہیں کہ

الله رب العزت اس آدمی پر رحم کرے جس نے شبِ ولادتِ نبی کو عید کے طور پر منانا شروع کیا تاکہ جن کے دلوں میں مرض ہے ان کی بیماری مزید بڑھے اور وہ اس مرض کی دوا سے عاجز آجائیں

یعنی جو ہم جو شعر پڑھتے ہیں

نثار تیری چہل پہل پر ہزاروں عیدیں ربیع الاول

سوائے ابلیس کے جہاں میں سبھی تو خوشیاں منا رہے ہیں

ایسے ابلیس صدیوں پہلے بھی موجود تھے!

اور ان ابلیسوں کا علاج علماءِ متقدمین نے بڑھ چڑھ میلاد منانے میں ڈھونڈھ رکھا تھا!

جس بندے کو جناب محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ولادت کی تھوڑی سی بھی خوشی نہیں ہوتی یقین کریں وہ منافق اصلی ہے

مسلمانوں کے بھیس میں منافقینِ مدینہ کی نسل سے ہے

 کیونکہ جب انسان کو یہ معلوم ہو کہ

 اس دن اس ماہ وہ ہستی دنیا میں تشریف لائی جو رحمة للعالمین ہے

 اور ان کی رحمت سے ہم موجود ہیں

 ان کی رحمت سے ہم مسلمان ہیں

 ان کی رحمت سے ہم عذاب سے محفوظ ہیں

 ان کی رحمت سے ہماری شریعت میں نرمی و آسانی ہے

ان کی رحمت سے ہماری شکلیں مسخ نہیں ہوتیں

ان کی رحمت سے ہم زمین میں نہیں دھنسائے جاتے

ان کی رحمت سے ہم پر آگ و پتھر کا عذاب نہیں اترتا

ان کی رحمت سے ہم افضل امت ہیں

 پھر بھی وہ انسان خوش نہ ہو تو کاہے کا مومن کہاں کا مسلمان؟

یقیناً جو اتنے انعام و اکرام دیکھ کر بھی دل میلا کرے شکل بگاڑے واللہ اس کا دل پہلے سے سیاہ روح پہلے سے ہی بدبودار ہے بس وہ مسلمانوں کے گھر پیدا ہوا ہے نام مسلمانوں والا ہے حلیہ مسلمانوں والا ہے

مگر واللہ وہ مسلمان نہیں ہے

کیونکہ

لا ورب العرش جس کو جو ملا ان سے ملا

بٹتی ہے کونین میں نعمت رسول اللہ کی

✍️ #سیدمہتاب_عالم

آج رات غریب کی بیٹی کیسے سوئے گی 😭

غریب کی بیٹی بوڑھی ہو رہی ہے اور ادھر یمن کے لوگ ہزاروں گاڑیوں کو دولہن کی طرح سجا کے گھما رہے ہیں 😭

milad un nabi

یہاں دو چار لائٹیں برداشت نہیں کرتے یمنیوں کی گاڑیاں کیسے برداشت کر رہے ہوں گے 😁

✍️ #سیدمہتاب_عالم

ابن باز (جہاز) نے کہا

(جو کہ وھابیوں کا گرو گھنٹال ہے)

اذا ظھر فی ای بلد البدع والاھواء والمنکرات فالھجرۃ واجبۃ

جب کسی ملک میں بدعتیں و خواہشِ نفسانی اور برے کام ظاہر ہو جائیں وہاں سے ہجرت کر جانا واجب ہے

لہذا نجدیو اس ملک پاکستان میں بدعتوں کی ظہور بلکہ کثرت حکومت کی سرپرستی میں ہو رہی ہے

نکل جاؤ اس ملک سے یہ بدعتی ملک ہے 🙄

milad un nabi

یہ وطن ہمارا ہے

تم ہو خوامخواہ اس میں 😀

✍️ #سیدمہتاب_عالم

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment