Eid milad un nabi (2) چھٹی صدی اور ذکرِ میلاد النبی 

Rate this post

  چھٹی صدی اور ذکرِ میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم

(1۔) حافظ شمس الدین محمد بن عبداللہ الجزری الشافعی رحمہ اللہ (المتوفى:٦٦٠ھ)لکھتے ہیں

“ابو لہب کو مرنے کے بعد خواب میں دیکھا گیا تو اس سے پوچھا گیا:اب تیرا کیا حال ہے ؟ کہنے لگا آگ میں جل رہا ہوں ، تاہم ہر پیر کے دن میرے عذاب میں تخفیف کر دی جاتی ہے ۔ انگلی سے اشارہ کرتے ہوئے کہنے لگا کہ (ہر پیر کو) میری ان دو انگلیوں کے درمیان سے پانی نکلتا ہے جسے میں پی لیتا ہوں اور یہ تخفیف عذاب میرے لئے اس وجہ سے ہے کہ میں نے ثویبہ کو آزاد کیا تھا جب اس نے مجھے محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی ولادت کی خوشخبری دی اور اس نے آپ کو دودھ بھی پلایا تھا “

eid milad un nabi

یہ سب لکھنے کے بعد حافظ شمس الدین الجزری رحمہ اللہ یوں تحریر فرماتے ہیں

فاذا كان أبو لهب الكافر ، الذى نزل القرآن بذمه جوزى فى النار بفرحة ليلة مولد النبى صلى الله عليه وسلم به ، فما حال المسلم الموحد من أمة النبى صلى الله عليه وسلم ، يسر بمولده ، ويبذل ما تصل إليه قدرته فى محبته صلى الله عليه وسلم ؟ ولعمرى انما يكون جزاؤه من المولى الكريم ، أن يدخله بفضله جنات النعيم

“نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ولادت باسعادت کے موقع پر خوشی منانے کے اجر میں اس ابو لہب کے عذاب میں بھی تخفیف کر دی جاتی ہے جس کی مذمّت میں قرآن پاک میں ایک پوری سورة نازل ہوئی ہے ۔ تو امت محمدیہ کے اس مسلمان کو ملنے والے اجر و ثواب کا کیا عالم ہوگا جو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے میلاد کی خوشی مناتا ہے اور آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی محبت و عشق میں حسبِ استطاعت خرچ کرتا ہے ؟ خدا کی قسم! میرے نزدیک اللہ تعالیٰ ایسے مسلمان کو اپنے محبوب کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی خوشی منانے کے طفیل اپنی نعمتوں بھری جنت عطا فرمائے گا “

حسن المقصد فی عمل المولد للسيوطى ، ص٦٥ ، ٦٦ ، مطبوعه دار الكتب العلمية بيروت ، لبنان

الحاوى للفتاوى للسيوطى، ص: ٢٠٦، مطبوعه مكتبه رشيدية سركى روڈ ، كوئٹه.

 المواهب اللدنية بالمنح المحمدية للقسطلانى، المقصد الأول: فى تشريف الله تعالى له عليه السلام….الخ ، ذكر رضاعه صلى الله عليه وسلم ، جلد: ١ ، ص: ٧٨، مطبوعه دار الكتب العلمية بيروت ، لبنان.

حجة الله على العالمين للنبهانى ، الباب الثاني، فصل فى اجتماع الناس لقراءة قصة مولد النبى صلى الله عليه وسلم ، ص:١٧٧، مطبوعه قديمى كتب خانه مقابل ارام باغ كراچی۔

(2.)شارح “صحیح مسلم” امام نووی رحمہ اللہ (المتوفی:٦٧٦ھ) کے شیخ امام ابو شامہ عبد الرحمن بن اسماعیل رحمہ اللہ (المتوفی:٦٦٥ھ) فرماتے ہیں:

من احسن ما ابتدع فى زماننا ما يفعل كل عام فى اليوم الموافق ليوم مولده صلى الله عليه وسلم من الصدقات والمعروف واء ظهار الزينة والسرور ، فان ذلك مع ما فيه من الاحسان للفقراء مشعر بمحبته صلى الله عليه وسلم وتعظيمه فى قلب فاعل ذلك ، وشكر الله على ما من به من ايجاد رسوله الله صلى الله عليه وسلم الذى ارسله رحمة للعالمين.

“ہمارے دور کا نیا مگر بہترین کام نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے یوم ولادت کا جشن منانا ہے ۔ جس میں ہر سال میلاد النبی کے موقع پر اظہارِ فرحت و سرور کے لئے صدقات و خیرات کے دروازے کھول دیئے جاتے ہیں ، نیک کام کئے جاتے ہیں ، صاف ستھرے لباس پہنے جاتے ہیں ، یہ ایک حسین ترین طریقہ ہے جو (اگرچہ نیا ہے) مگر اس کے حسین ہونے میں کلام نہیں کیونکہ اس سے جہاں ایک طرف غرباء و مساکین کا بھلا ہوتا ہے وہاں اس سے حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذاتِ مبارکہ کے ساتھ والہانہ محبت کا پہلو بھی نکلتا ہے اور پتہ چلتا ہے کہ اظہارِ شادمانی کرنے والے کے دل میں اپنے نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی بے حد تعظیم پائی جاتی ہے اور ان کی عظمت کا تصور موجود ہے گویا وہ اپنے رب کا شکر ادا کر رہا ہے کہ اس نے بے پایاں رحمت عطا فرمائی اور وہ محبوب صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ان کو دے دیا جو تمام جہانوں کے لیے رحمت بنا کر بھیجا گیا ہے “

 انسان العیون فی سیرة الامين المامؤن المعروف به السيرة الحلبية ، باب: تسميته صلى الله عليه وسلم محمدا واحمدا ، جلد: ١ ، ص: ١٢٣، مطبوعه دار الكتب العلمية بيروت ، لبنان.

حجة الله على العالمين للنبهانى ، الباب الثاني، فصل فى اجتماع الناس لقراءة قصة مولد النبى صلى الله عليه وسلم ، ص:١٧٤، مطبوعه قديمى كتب خانه مقابل ارام باغ كراچی۔

یہی قول غیر مقلدین کے معروف عالم وحید الزمان حیدر آبادی نے بھی نقل کیا ہے:

هدية المهدى (حاشيه) ص: ٤٦، مطبوعه دهلى.

امام ابو شامہ رحمہ اللہ شاہ اربل کی طرف سے وسیع پیمانے پر میلاد شریف منائے جانے اور اس پر خطیر رقم خرچ کئے جانے کے بارے میں اس کی تعریف کرتے ہوئے فرماتے ہیں کہ:

مثل هذا الحسن يندب إليه ويشكر فاعله ويثنى عليه.

“اس نیک عمل کو مستحب گردانا جائے گا اور اس کے کرنے والے کا شکریہ ادا کیا جائے گا اور اس پر اس کی تعریف کی جائے گی”

eid milad un nabi eid milad un nabi eid milad un nabi eid milad un nabi eid milad un nabi eid milad un nabi

سبل الھدی والرشاد فی سيرة خير العباد ، الباب الثالث عشر: فى اقوال العلماء فى عمل المولد الشريف واجتماع الناس له وما يحمد من ذلك وما يذم ، جلد: ١ ، ص: ٣٦٣، مطبوعه دار الكتب العلمية بيروت ، لبنان.

   ✍️ابو الحسن محمد افضال حسین نقشبندی مجددی ۔

(٢٦/٩/٢٠٢٣)

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment