17رمضان یوم وصال شہزادی کونین حضرتِ سیدہ رقیہ بنت رسول اللہ 💗

Rate this post

💗 17رمضان یوم وصال شہزادی کونین حضرتِ سیدہ رقیہ بنت رسول اللہ 💗

آج شہزادی کونین ، زوجہ ذوالنورین ، ذات الھجرتین ، خالہ حسنین کریمین ، ام عبداللہ حضرت سیّدہ رقیہ بنت رسول اللہ (صلی اللّٰہ علیہ وآلہ وسلّم و رضی اللہ عنہا)کا یوم وصال باکمال ہے ۔

آپ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم اور حضرت سیدہ خدیجة الکبریٰ رضی اللہ عنہا کی دوسری صاحبزادی ہیں ۔ جنہوں نے اپنے شوہر نامدار حضرت سیّدنا عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ کے ہمراہ پہلے ہجرت حبشہ پھر مدینہ منورہ کی جانب ہجرت کر کے “ذات الھجرتین” کا لقب پایا ۔ غزوہ بدر کے موقع پر نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے آپ کی عیادت و بیمار پرسی کے لیے حضرت سیّدنا عثمان غنی رضی اللہ عنہ کو آپ کے پاس رہنے کا حکم دیا ۔ غزوہ بدر میں شریک نہ ہونے کے باوجود شہزادی رسول کی عیادت کی بدولت حضرت سیّدنا عثمان رضی اللہ عنہ کا شمار حکم نبوی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم کے مطابق اصحاب بدر میں ہوتا ہے ۔

 ١٧/رمضان المبارک سن ٢ ہجری میں آپ رضی اللہ عنہا نے مدینہ منورہ میں وصال باکمال فرمایا اور جنت البقیع شریف میں تدفین عمل میں آئی ۔ اللہ تعالیٰ بوسیلہ مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم آپ کی تربت اطہر پر اپنی لاکھوں کروڑوں رحمتوں اور برکتوں کا نزول فرمائے اور آپ کے صدقے ہماری بے حساب بخشش اور مغفرت فرمائے . آمین ثم آمین

(1.) امام ابن سعد رحمہ اللّٰہ (المتوفی : ٢٣٠ھ) لکھتے ہیں :

ومرضت ورسول الله يتجهز إلى بدر فخلف عليها رسول ﷲ صلى الله عليه وسلم ، عثمان بن عفان فتوفيت ورسول الله ببدر فى شهر رمضان

“اور جب نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم غزوہ بدر کی تیاریوں میں مصروف تھے تو اس وقت یہ (حضرت سیدہ رقیہ رضی اللہ عنہا) بیمار ہو گئیں ، آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم نے ان کی تیمارداری کے لیے حضرت سیّدنا عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ کو ان کے پاس رہنے کا حکم ارشاد فرمایا ، پس آپ رضی اللہ عنہا نے رمضان المبارک میں وصال فرمایا جبکہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم غزوہ بدر میں تھے”.

⛔الطبقات الكبرى لابن سعد ، ذكر بنات رسول ﷲ ، رقم الترجمة : رقية بنت رسول ﷲ ، جلد : ٤ ، ص : ٢٦١ ، مطبوعه مکتبه عمريه كانسى روڈ کوئٹه

(2.) امام ابن عبد البر رحمہ اللّٰہ (المتوفی : ٤٦٣ھ) لکھتے ہیں :

واما وفاة رقية فالصحيح فى ذلك أن عثمان تخلف عليها بأمر رسول ﷲ صلى الله عليه وسلم وهى مريضة فى (حين) خروج رسول ﷲ صلى الله عليه وسلم إلى بدر ، وتوفيت يوم وقعة بدر ، ودفنت يوم جاء زيد بن حارثة بشيرا بما فتح الله عليهم ببدر

“غزوہ بدر کے موقع پر حضرت سیدہ رقیہ رضی اللہ عنہا بیمار تھیں ، نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلّم نے حضرت سیدنا عثمان رضی اللہ عنہ کو ان کی تیمارداری کے لیے غزوہ بدر میں شرکت سے روک دیا تھا ، آپ رضی اللہ عنہا کا وصال باکمال اسی دن ہوا جس دن غزوہ بدر واقع ہوا ، اور جس دن حضرت سیّدنا زید بن حارثہ رضی اللہ عنہ غزوہ بدر میں فتح کی خوشخبری لے کر آئے اس دن حضرت سیدہ رقیہ رضی اللہ عنہا کو سپرد خاک کیا گیا”.

⛔ الاستيعاب فى معرفة الاصحاب ، باب النساء وكناهن ، باب الراء ، رقم الترجمة : رقية بنت رسول ﷲ ، جلد : ٤ ، ص : ٤٠٠ ، مطبوعه دار الكتب العلمية بيروت ، لبنان.

✍️ابو الحسن محمد افضال حسین نقشبندی مجددی

((١٧/رمضان المبارك ١٤٤٥ھ//٢٨/مارچ ٢٠٢٤ء))

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment