یزید پلید اسلاف کی نظر میں

Rate this post

یزید پلید.. اسلاف کی نظر میں

یزید کیا تھا، اس کے متعلق اسلاف کا چودہ سو سالہ تاریخی ریکارڈ ملاحظہ ہو.

✍️صحابہ کرام رضی اللہ عنہم

 صحابہ کرام نے یزید کی مخالفت اسکے ظالم اور فاسق ہونے کی وجہ سے کی تھی۔[تہذیب التہذیب]

✍️حضرت عبداللہ بن زبیر رضی اللہ عنہ :

حضرت عبد اللہ بن زبیر رضی اللّٰہ عنہ کو جب یزید کی موت کی خبر پہنچی تو آپ نے پکار کر کہا: ” اے کم بختو اے اللہ کے دشمنو اب تم کیوں لڑ رہے ہو تمہارا گمراہ سردار مر گیا. [تاریخ ابن خلدون]

✍️امام ابنِ حجر عسقلانی:

یزید، معیوب انسان ہے وہ اس قابل نہیں کہ اس سے روایت لی جائے. [لسان المیزان]

✍️امام شمس الدین ذہبی:

میں کہتا ہوں یزید نے جو کچھ مدینہ کے لوگوں کیساتھ کیا اور امام حسین اور انکے بھائیوں اور اولادوں کو قتل کیا۔ اور یزید بدکار، شراب نوش، اور بدی والی چیزوں میں مبتلا رہتا تھا تو لوگ اس سے نفرت کرتے تھے۔ اور اسکے خلاف ایک سے زیادہ مرتبہ خروج کیا۔ خدا نے اسکو لمبی عمر نہیں دی. [تاریخ الاسلام]

مزید فرماتے ہیں: یزید ناصبی تھا، سنگدل بد زبان، غلیظ ، جفا کار مئے نوش ، بدکار تھا. اس نے اپنی حکومت کا افتتاح امام شہید حسین کے قتل سے کیا، اور واقعہ حرّہ(مدینہ پر حملہ) پر اسی لئے لوگوں نے اس پر پھٹکار بھیجی، اور اسکی عمر میں برکت نہ ہو سکی، امام حسین رضی اللہ عنہ کے سانحہ بعد بہت سے حضرات نے محض فی سبیل اللہ خروج کیا جیسے حضرات اہلِ مدینہ. [سیر اعلام النبلاء]

✍️حضرت عمر بن عبدالعزیز:

نوفل بن ابی فرات کہتے ہیں، میں حضرت عمر بن عبد العزیز رحمۃ اللّٰہ علیہ کے پاس موجود تھا، ایک شخص نے یزید کو امیر المومنین کہا تو حضرت عمر بن عبد العزیز رحمۃ اللّٰہ علیہ نے حکم دیا کہ اسکو بیس کوڑے مارے جائیں. [سیر اعلام النبلاء، تہذیب التہذیب]

✍️امام ابنِ حجرعسقلانی :

یزید بن معاویہ بن ابو سفیان اموی ابو خالد نے 60 ھجری میں خلافت سنبھالی اور 64 ھجری میں مَر گیا، پورے چالیس سال کا بھی نہ ہو سکا، یزید اس بات کا اہل نہیں کہ اس سے کوئی روایت لی جائے۔[تقریب التہذیب]

✍️حضرت مجددالف ثانی:

یزید پلید صحابہ کرام میں سے نہیں ہے۔ اس کی بدبختی میں کس کو کلام ہے؟ جو کام اس بدبخت نے کیا، کوئی کاگر تک بھی نہیں کرتا، اھلسنت و جماعت کے بعض علماء نے جو اس پر لعنت کرنے کے بارے میں تؤقف کیا ہے وہ اس وجہ سے نہیں کہ وہ اس سے راضی ہیں. [مکتوبات امام ربانی]

 ✍️حضرت شاہ عبدالعزیز محدث دہلوی:

یزید فاسق ، شرابی، اور ظالم تھا۔ [سرُّ الشہادتَین]

 مزید مزیدفرماتےہیں : یزید پلید ہے [فتاویٰ عزیزی]

✍️امام ابنِ حجرمکی ھیتمی :

یزید کے فسق پر متفق ہونے کے بعد اس بات پر علماء کا اختلاف ہے کہ خاص اسکا نام لیکر اس پر لعنت کرنا جائز ہے یا نہیں؟ جن لوگوں نے اس پر لعنت کو جائز قرار دیا ان میں ابنِ جوزی بھی شامل ہے۔ [الصواعق المحرقہ]

✍️علامہ عبد العزیز پرھاروی:

”علماء اھلسنت نے یزید پر لعنت کو جائز کہا ہے۔ جو علماء یزید کو ملعون کہتے ہیں ان میں ایک بہت بڑے محدّث ابنِ جوزی رحمۃ اللّٰہ علیہ بھی ہیں انہوں نے اسکے متعلق کتاب لکھی ہے جسکا نام “الرد علی معتصب العنید المانع من ذم یزید” ہے۔ اور انہیں علماء میں امام احمد بن حنبل رحمۃ اللّٰہ علیہ اور قاضی ابو یعلٰی رحمۃ اللّٰہ علیہم بھی ہیں۔ [النّبراس]

✍️علامہ محمود آلوسی حنفی:

میں کہتا ہوں کہ یزید خبیث نے اللہ کے رسول ﷺ کے پیغام کی قدر نہ کی۔ میرے نزدیک یہ درست ہے کہ یزید جیسے شخص پر لعنت کی جائے۔ اسکی توبہ کا امکان اسکے ایمان کے امکان سے بھی کم ہے۔ یزید کے ساتھ ابنِ زیاد، ابنِ سعد اور اسکی جماعت بھی شامل ہے۔ بیشک ان پر اللہ کی لعنت ہے۔ اور انکے دوستوں پر اور انکے حمایتیوں پر اور ان تمام لوگوں پر جو قیامت تک انکی پیروی کرے۔ جب تک امام حسین رضی اللّٰہ تعالٰی عنہ کیلئے آنکھیں آنسو گرائیں۔ [روح المعانی]

✍️حضرت ملا علی قاری :

یزید اور ابن زیاد اور انہیں کے مثل دوسرے لوگوں پر لعنت کرنا جائز ہے. کیونکہ بعض علماء کرام نے ان دونوں پر لعنت کرنا جائز قرار دیا ہے بلکہ امام احمد بن حنبل یزید کے کفر کے قائل ہیں. [شرح شفاء]

مزید فرماتے ہیں : یزید کے کفر میں اختلاف ہے، جو کچھ اس سے وارد ہوا ہے وہ اس کے کفر پر دلیل ہے، مثلاً اس کا شراب کو حلال قرار دینا، سیدنا حسین رضی اللہ عنہ کے قتل کے بعد اس کا یہ کہنا کہ میں نے اھلبیت کو اس کا بدلہ دیا جو میرے بڑوں کیساتھ بدر میں کیا گیاـ [منح الروض الازھر فی شرح الفقه الاکبر]

✍️قاضی ثناءاللہ حنفی صاحب تفسیر مظہری:

ابن جوزی نے لکها ہے کہ قاضی ابو یعلیٰ نے اپنی کتاب المعتمد ميں صالح بن احمد بن حنبل سے بيان نقل کيا ہے۔ صالح کا بيان ہے کہ ميں نے اپنے والد احمدبن حنبل سے کہا کہ ابا، لوگ کہتے ہيں کہ ہم یزید سے محبت کرتے ہيں۔ ابا نے فرمایا کہ بيٹے! جوشخص اللَّہ پر ایمان رکهتا ہے کيا اس کے لئے یزید سے محبت رکهنے کا کوئی جواز ہوسکتا ہے؟ ۔ اس شخص پر کس طرح لعنت نہ جائے جس پر اللَّہ نے لعنت کی ہو۔ ميں نے عرض کيا، اللَّہ نے اپنی کتاب ميں کس جگہ یزید پر لعنت کی ہے۔ امام احمد نے فرمایا: اللہ نے فرمایا:

فَہَلۡ عَسَیۡتُمۡ اِنۡ تَوَلَّیۡتُمۡ اَنۡ تُفۡسِدُوۡا فِی الۡاَرۡضِ وَ تُقَطِّعُوۡۤا اَرۡحَامَکُمۡ ﴿۲۲﴾ اُولٰٓئِکَ الَّذِیۡنَ لَعَنَہُمُ اللّٰہُ فَاَصَمَّہُمۡ وَ اَعۡمٰۤی اَبۡصَارَہُمۡ ﴿۲۳﴾

ترجمہ: پهر تم سے یہ بهی توقع ہے اگرتم ملک کے حاکم ہو جاؤ تو ملک ميں فساد مچانے اور قطع رحمی کرنے لگو۔ یہی وہ لوگ ہيں جن پر اللہ نے لعنت کی ہے پهر انہيں بہرا اور اندها بهی کر دیا ہے۔ [تفسیر مظہری]

✍️امام ابوبکر جصاص حنفی :

صحابہ کرام خلفاء اربعہ کے بعد فاسق امراء کے ساتھ جہاد میں شریک ہوئے۔ چنانچہ حضرت ابو ایوب انصاری رضی اللّٰه عنه نے “یزید لعین” کی معیت میں بھی جہاد فرمایا ہے. [احکام القرآن]

✍️امام احمد رضا بریلوی :

ہمراہیان یزید یعنی جو ان مظالم ملعونہ میں اس کے ممد و معاون تھے ضرور خبیث و مردود تھے، اور کافر و ملعون کہنے میں اختلاف ہے، ہمارے امام کا مذہب سکوت ہے، اور جو (اسے کافر و ملعون) کہے وہ بھی موردالزام نہیں۔[فتاوی رضویہ]

✍️ابنِ تیمیہ:

یہ آئمہ مسلمین میں سے کسی کا عقیدہ نہیں کہ یزید عادل یا خدا کا فرماں بردار تھا. اسی طرح یہ بھی آئمہ مسلمین میں سے کسی کا عقیدہ نہیں کہ یزید کی ہر حکم کی اطاعت واجب تھی.

[منہاج السّنة النبویّة]

✍️ابنِ حزم:

یزید اسلام میں برے کاموں کو ایجاد کرنے والا رہا ہے۔ اس نے اپنے قتدار کے آخری دور میں “حرّہ” کے دن اہلِ مدینہ کا قتلِ عام کیا۔ اُنکے بہترین افراد و باقی صحابہ کو قتل کیا۔ اور اپنی سلطنت کے اوائل میں امام حسین رضی اللّٰہ عنہ اور انکے اھلبیت کو قتل کیا۔ اور مسجدِ حرام میں عبد اللہ بن زبیر رضی اللّٰہ عنہ کا محاصرہ کیا خانہ کعبہ اور اسلام کی بےحرمتی کی۔ پھر اللہ تعالٰی نے انہیں دنوں اسکو مار ڈالا۔

[جمھرة انساب العرب]

مذکورہ حوالہ جات پڑھنے کے بعد بھی اگر کوئی شخص یزید کے بارے میں نرم گوشہ رکھتا ہے وہ اپنی خیر منائے.

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment