طلباء و طالباتِ درسِ نظامی کی مشکلات 

Rate this post

طلباء و طالباتِ درسِ نظامی کی مشکلات

ان کو حال ذوالحال بے حال کر دیتا ہے

ممیز تمییز سے کچھ تمییز نہیں آتی

افعالِ ناقصہ کو ناقص العقل نہیں سمجھ پاتے

حروفِ مشبہ ان پر شبہ ڈالتے ہیں

جار مجرور سے یہ مسرور نہیں

مضاف سے ان کی عقل کا گراف بلند نہیں ہو پاتا

مبتداء کی ابتداء بھی نہیں سمجھ پاتے جبکہ خبر کی خبر نہیں ہوتی

فعل کے فاعل و نائب فاعل کی پہچان نہیں گویا ان کی عقل میں جان نہیں

اسمِ ظرف سمجھنے کو ان کی عقل کا ظرف قابل نہیں

اسمِ آلہ گویا عقل سے اعلی شے ہے

صرفی گردان سے یوں بھاگتے ہیں جیسے تعویذ سے شیطان بھاگتا ہے

حتی کہ سہ اقسام کی پہچان نہیں

شش اقسام سے اکثر انجان ہیں

 ہفت اقسام تو ان کے وھم و گمان میں بھی نہیں

تعلیل سے خود علیل ہو جاتے ہیں

اجوف کی طرح خالی الدماغ ہیں معتل کی طرح ہر وقت بیمار ناقص کی طرح نقص زدہ رہنا پسند کرتے ہیں

مجرد کی طرح کنوارے ہو کر بھی دماغ مزید فیہ جیسی سوچ رکھتا ہے کہ مجھ میں اضافہ کیا جائے

چاہتے تو ترکیب کرنا ہیں مگر ترکیب تنہاء کلمہ سے نہ ہونے کی وجہ سے طویل عرصہ مبنی بر سکون رہتے ہیں

اور کمائی اور پڑھائی نہ ہونے کی وجہ سے آخر کار کسی کی زندگی میں حرف زائدہ کی طرح ہمیشہ فالتو ہی رہتے ہیں! 😀😀😀

✍️ #سیدمہتاب_عالم

(انتہائی اہم سوال اور میرے ذہن کے مطابق جواب)

          سوال پیدا ہوتا ہے کہ جب ہر سال مدارس دینیہ سے ہزارہا طلباء علوم شرعیہ کے اسناد وصول کر رہے ہیں

عالم بنتے جا رہے ہیں اس کے باوجود معاشرے میں ان کی اتنی برکت کیوں نظر نہیں آ رہی ہے جتنی چاہئیے تھی؟

    میری سمجھ کے مطابق سب سے اطمینان بخش جواب حکیم الامت سر ڈاکٹر علامہ محمد اقبال کا ایک شعر ہے:

    علم میں بھی سرور ہے لیکن

    یہ وہ جنت ہے جس میں حور نہیں

اس میں کوئی شک نہیں کہ طلباء مدارس میں علوم شرعیہ پڑھ لیتے ہیں۔

وہ تقاریر بھی سیکھ لیتے ہیں اور عارضی جذبات کا اظہار بھی کر دیتے ہیں۔

مگر جو اصل چیز ہے وہ سادہ لفظوں میں ہے “نفس کی تربیت”، جس کا فقدان واضح نظر آ رہا ہے۔

بڑے بڑے علماء، جن کے سروں پر ان کے جثوں سے بڑے ان کے دستار ہوتے ہیں، کے کرتوت دیکھ کر مجھے سمجھ آیا کہ فقط علوم شرعیہ پڑھ کر انسان نہ خود صراط مستقیم پر چل سکتا ہے نہ کسی کو اس راسطے پر چلا سکتا ہے۔

علوم شرعیہ کے ساتھ ساتھ علوم باطنیہ کا حصول بھی ضروری ہے جس کے ذریعہ تزکیہ نفس ممکن ہے اور یہ علم صرف اولیاء اللہ کے در پر مل سکتا ہے

جو کہ فی زمانہ نہ ہونے کے مترادف ہے۔ اللہ تعالی اپنے حبیب صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے صدقے ایسے مولوی حضرات کو ہدایت دے

جو خواہشات نفسانیہ کی خاطر لباس خضری میں وہ کچھ کر لیتے ہیں جن کو دیکھ کر ابلیس بھی شرما جائے ۔

پیر زکوڑی

بریکنگ نیوز !!علماء اور طلباء کے لئے بجٹ میں بڑی پیش رفت وخوشخبری علماء کرام اور طلباء کرام میں خوشی کی لہر دوڑ گئی۔

مساجد ومدارس کے علمائے کرام اور طلباء کے لیے پاکستانی بجٹ میں بڑی پیش رفت

 وزیر اعظم شہباز شریف نے

یکم جون سے درجہ اولیٰ سے لیکر درجہ رابعہ تک کے

تمام طلباء کو 6000

درجہ خامسہ سے دورہ حدیث تک کے

 تمام طلباء کو 12000

اور وفاق المدارس العربیہ پاکستان بورڈ سے ملحق

 تمام مدارس میں پڑھانے والے

علمائے کرام اور آئمہ مساجد کو 20000

 بار ماہانہ

 استغفار پڑھنے کا مشوره دیاہے،تاکہ اللہ کریم ہمارے ملک پر خصوصی رحم فرمائے آمین۔

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment