شان صدیق اکبر

Rate this post

انبیاء علیہم السلام کے بعد ظاہری،باطنی،روحانی،سیاسی ہرقسم کے حوالے سے افضل ترین ہستی سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ عنہ پر کروڑوں سلام

شان صدیق اکبر

انبیاء کے بعد صدیق اکبر رضی اللہ عنہ سب سے افضل انسان

آپ ( صدیقِ اکبر ) رضی اللہ عنہ اس قدر جامِعُ الکَمالات اور مَجْمعُ الفضائل ہیں کہ اَنبیائے کِرام علیہمُ الصّلوٰۃ ُوالسّلام کے بعد اگلے اور پچھلے تمام انسانوں میں سب سے افضل و اعلیٰ ہیں۔ ( عاشقِ اکبر ، ص4 )

عاشقِ اکبر کی سیرت اپنائیے

سنتیں سیکھتے سکھاتے یا سنتوں پر عمل کرتے کراتے ہوئے اگر مشکلات کا سامنا ہو تو ہمیں عاشقِ اکبر سیدنا صدیقِ اکبر رضی اللہ عنہ کے حالات و واقعات کو پیشِ نظر رکھ کر اپنے لئے تسلی کا سامان مہیا کرکے دینی کام مزید تیز کر دینا چاہئے

اور دین کے لئے تَن مَن دَھن نثار کردینے کا جذبہ اپنے اندر اُجاگر کرنا چاہئے۔ ( عاشقِ اکبر ، ص12 )

‏افضلیت حضرت صدیق اکبر رضی اللّٰہ تعالیٰ عنہ پر اہل سنت و جماعت کا اجماع و اتفاق ہے، جسے تسلیم کئے بغیر کوئی شخص ہرگز ہرگز اہل سنت و جماعت سے نہیں ہو سکتا، اگرچہ وہ اپنے آپ کو سنی کہتاپھرے، اسکے کہنے سے کچھ نہیں ہو گا

منطقی رنگ میں شانِ صدیق اکبر

امتِ محمدیہ عَلٰی صَاحِبَتِھَا الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ میں اللہ تعالی کے نزدیک سب سے بڑے عزت دار شخص حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ تعالٰی عنہ ہیں ، اور یہ بات قرآن پاک سے بہت خوب صورت انداز سے ثابت ہوتی ہے ۔

سورۃُ اللّیل کی آیت 07 میں ارشاد ہے:

وَ سَیُجَنَّبُهَا الْاَتْقَى

یعنی عنقریب جہنم سے اسے دور رکھا جائے گا جو أتقیٰ (سب سے بڑا پرہیزگار) ہے ۔

مفسرین کا اتفاق ہے کہ یہاں أتقیٰ (سب سے بڑے پرہیزگار) سے مراد حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ تعالٰی عنہ ہیں ۔

اس آیت کے مطابق صُغریٰ بنائیے

“ابوبکر صدیق أتقیٰ (سب سے بڑے پرہیزگار) ہیں”

سورۃُ الحجرات کی آیت 49 میں ارشاد ہوا:

اِنَّ اَكْرَمَكُمْ عِنْدَ اللّٰهِ اَتْقٰىكُمْؕ

یعنی اللہ تعالی کے ہاں تم میں سے سب سے بڑا مُکرَّم (عزت دار) شخص وہ ہے جو تم میں أتقیٰ (سب سے بڑا پرہیزگار) ہے.

اس آیت کے مطابق کُبریٰ بنائیے:

أتقیٰ (سب سے بڑا پرہیزگار) أکرم عند اللہ (اللہ کے ہاں سب سے زیادہ عزت دار) ہے.

حدِ اوسط “أتقیٰ” کو ساقط کیجیے تو نتیجہ آئے گا

ابوبکر صدیق اکرم عند اللہ (اللہ کے ہاں سب سے بڑے عزت دار) ہیں.

خداے پاک نے أتقیٰ لقَب اُن کو دیا دیکھو

وہ ایسے مُتّقِی اُن پر ریاضت ناز کرتی ہے

مزید پڑھیں

حضرت عمر رضی اللہ عنہ کی خصوصیت

مقامِ صدّیق بَزُبانِ حسّان بن ثابت رضی اللّہ تعالیٰ عنہ

اللہ ﷻ کے محبوب، دانائے غیوب ﷺ نے حضرت سیدنا حسان بن ثابت رضی الله عنہ سے ارشاد فرمایا: ’’اے حسان! کیا تم نے بھی میرے صدیق کے بارے میں کچھ مدح سرائی کی ہے؟‘‘

عرض کیا: ’’جی ہاں یارسول اللہ ﷺ!‘‘

فرمایا: ’’مجھے سناؤ۔‘‘

حضرت سیدنا حسان بن ثابت رضی الله عنہ نے شان صدیق اکبر میں ایک رباعی عرض کی:

وثاني اثنين في الغار المنيف وقد

طاف العدو به إذ صاعد الجبلا

اے ابوبکر صدیق رضی الله عنہ! آپ اس بابرکت غارِ ثور میں ’’ثَانِیَ اثْنَیْن‘‘ یعنی دو میں سے دوسرے تھے جب دشمن نے اس پہاڑ کے گرد چکر لگایا اور اس پر چڑھا۔

وكان حب رسول اللہ قد علموا

من البرية لم يعدل به بدلا

اور آپ ہی رسول اللہ ﷺ کے محبوب ہیں اور سب جانتے ہیں کہ حضور نبی کریم ﷺ نے ساری مخلوق میں کسی کو آپ کا ہم پلہ نہیں سمجھا۔

خاتم المرسلین، رحمة للعالمین ﷺ یہ سن کر بہت خوش ہوئے اور اتنا مسکرائے کہ آپ ﷺ کی مبارک داڑھیں نظرآنے لگیں، پھر ارشاد فرمایا: ’’اے حسان! تو نے سچ کہا۔ ابوبکر ایسے ہی ہیں۔‘‘

حوالہ جات

• المستدرک علی الصحیحین، کتاب معرفة الصحابة، ابوبکر الصدیق ابن ابی قحافة، جلد ٤، صفحہ ۷، الحدیث ٤٤٦۹

• جمع الجوامع، مسند انس بن مالک، ج۱٤، ص٦۱، الحدیث ۹۳٦۱

• تاریخ مدینہ دمشق لابن عساکر، جلد ۳۰، صفحہ ۹۱

• شرح الزرقانی علی المواھب، جلد ۱، صفحہ ۳۳۷

• طبقات ابن سعد، جلد ۳، صفحہ ۱۲۹

شان صدیق اکبر بزبان حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ

سیدنا حضرت فاروق اعظم رضی اللہ تعالی عنہ فرماتے ہیں

“صدیق اکبر رضی اللہ تعالی عنہ ہم سب کے سردار، ہم سب سے بہتر اور حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو ہم سب سے پیارے تھے” –

نیز فرمایا

‘اہل زمین کے ایمان کو ایک پلڑے میں اور حضرت صدیق اکبر رضی اللہ تعالی عنہ کے ایمان کو دوسرے پلڑے میں تولا جائے تو صدیق رضی اللہ تعالی عنہ کا پلڑا زیادہ وزنی ہو گا” –

شان ابوبکر صدیق بزبان علی رضی اللہ عنہ 

حضرت مولائے کائنات علی المرتضی رضی اللہ تعالی عنہ فرماتے ہیں:

“ہم نیکو کاری میں صدیق اکبر رضی اللہ تعالی عنہ سے کبھی نہیں بڑھے” –

شان صدیق اکبر

حضرت ربیع بن یونس رضی اللہ تعالی عنہ فرماتے ہیں:

“کتب سماویہ میں حضرت صدیق اکبر رضی اللہ تعالی عنہ کی مثال بارش سے دی گئ ہے کہ جہاں پڑتی ہے نفع دیتی ہے” –

شان صدیق اکبر

حضرت ابوھریرہ رضی اللہ تعالی عنہ فرماتے ہیں:

“اگر حضرت صدیق اکبر رضی اللہ تعالی عنہ خلیفہ نہ بنتے تو خدائے واحد کی پرستش کرنے والا ایک بھی دکھائ نہ دیتا” –

شان صدیق اکبر

(اقتباس از

تجلیاتِ سیدنا حضرت صدیق اکبر رضی اللہ تعالی عنہ)

اشعار شان صدیق اکبر

“اِذھُما فِی الغار”

شان صدیق اکبر

اِک شَبِ تار ہے

اَور اِک غار ہے

اَور اِس غار میں

ایک سَچّا ہے اَور ایک سَچّائی ہے

اِک مَحَبَّت ہے اَور ایک حُب دار ہے

بے پَناہ پِیار ہے

بے پَناہ پِیار ہے، جِس پہ شاہِد ہے نُورانی فَرمان بھی

رَبّ کا قُرآن بھی

بے پَناہ پِیار ہے، زانُوئے یار پَر

یارِ فِی الغار پَر

دَولَتِ دَو جَہاں

جَلوہ پَیرا ہُوئی

فَیض فَرما ہُوئی

لَیکِن اُس غار کے کونے کُھدرے میں مَوجُود اِک سانپ سے

یہ تَقَرُّب کا مَنظر نہ دیکھا گیا

شَوخ نے ڈَس لِیا

سانپ کے زِہر سے ضَبط صِدِّیقِ اَکبَرؓ کا ٹُوٹا مَگر

سانپ کو کیا خَبر؟

اِسکی تَر آنکھ سے

اُنﷺ کے رُخسار تَک

نُقرَئی آب کا

مَحرَمِ خَواب تک

جو سَفر ہو گیا

مُعتبر ہو گیا….!

شان صدیق اکبر

*صَلَّی اللّٰهُ عَلَیہِ وَآلِہِ وَسَلَّم*

منقبتی نظم: نادِرؔ صِدِّیقی صاحب

ہجرت کی رات ہی نہ فقط ہم سفر رہے

صدیقؓ ہم رکابِ نبیﷺ عُمر بھر رہے

ایسا نہیں کہ صرف رہے زندگی میں ساتھ

اب بھی ہیں اُن کے ساتھ یہ مدِ نظر رہے….!

نبیوں کے بعد خلق میں افضل ترین ہے

سلطانِ کائناتﷺ کا وہ جانشین ہے

وہ یارِ غار بھی ہے رفیقِ مزار بھی

فیضانؔ اُس کی ذات وفا کی اَمین ہے….!

فیض رسول فیضانؔ

*صلّی اللّٰه علیہ وآلہ وسلّم💚

السلام علیک یا ابو بکر صدیقؓ🙏

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment