تذکرہ علامہ سید احمد سعید کاظمی رحمۃ اللہ علیہ

Rate this post

❄️ تذکرہ علامہ سید احمد سعید کاظمی رحمہ اللہ ❄️غزالی زماں ، رازی دوراں ، حضرت علامہ سید احمد سعید شاہ کاظمی رحمہ اللہ بیک وقت شیخ التفسیر ، شیخ الحدیث ، شیخ الفقہ ، عظیم ترین محقق ، مدقق اور روحانی پیشوا تھے۔ آپ کا سلسلہ نسب حضرتِ سیدنا امام موسٰی کاظم رضی ﷲ عنہ سے منسلک ہے۔

ولادت :

آپ ١٩١٣ء کو شہر امروہہ میں حضرت سید محمد مختار کاظمی رحمہ اللہ کے ہاں پیدا ہوئے۔

تعلیم و تربیت :

تعلیم و تربیت کی تکمیل برادرِ معظم حضرت علامہ سید محمد خلیل کا ظمی محدث امروہی رحمہ اللہ سے کی اور سولہ سال کی عمر میں سند فراغت حاصل کی۔ انہی کے دست حق پر سلسلہ چشتیہ صابریہ میں بیعت ہوئے اور اجازت وخلافت حاصل کی۔

تدریس :

آپ نے تدریس کا آغاز جامعہ نعمانیہ لاہور سے کیا ، بعد ازاں ١٩٣١ء میں امروہہ مدرسہ محمدیہ میں چار سال تدریس فرمائی۔ ١٩٣٥ء کے اوائل میں ملتان تشریف لائے ، مسجد حافظ فتح شیر بیرون لوہاری دروازہ میں درس قرآن و حدیث کاآغاز کیا ، جو اٹھارہ سال تک جاری رہا۔ ١٩٤٤ء میں ملتان کے وسط میں زمین خرید کر مدرسہ انوار العلوم قائم کیا۔ اب تک اس مدرسہ سے سینکڑوں طلبہ علوم اسلامیہ کی تکمیل کرکے ملک اور بیرون ملک دین متین کی خدمت سرانجام دے رہے ہیں۔

تحریک پاکستان میں خدمات :

حضرت علامہ کا ظمی رحمہ اللہ نے برصیغر کی تقسیم اور مسلمانوں کے لئے علیحدہ مملکت کے قیام کے لئے گراں قدر خدمات سر انجام دیں۔ قیام پاکستان کی توثیق کے لئے بنارس سنی کا نفرنس میں بھی بھرپور طریقے سے شرکت کی۔

سید احمد سعید کاظمی

تنظیمی خدمات :

١٩٤٨ء میں آپ نے علماء و مشائخ کا عظیم الشان کنونشن منعقد کر کے جمعیت علماء پاکستان کی بنیاد ڈالی۔ غازیءِ کشمیر مولانا ابوالحسنات محمد احمد قادری رحمہ اللہ کو صدر اور حضرت علامہ کا ظمی رحمہ اللہ کو ناظم اعلیٰ مقررکیا گیا۔

١٩٥٣ء میں تحریک ختم نبوت میں ولولہ انگیز کردار ادا کیا۔ مجلس صدارت کے فرائض آپ نے سر انجام دیئے۔ بالآخر مرزائیوں کا غیر مسلم اقلیت قرار پانا اسی تحریک کا نتیجہ ہے۔

١٩٧٦ء میں تحریک نظام مصطفی میں آپ کا کردار نمایاں ہے۔

١٩٦٣ء میں محکمہ اوقاف میں جامعہ اسلامیہ کے شعبہ حدیث کے لئے اس شعبہ کے سربراہ کی حیثیت سے کام کیا۔

١٩٧٨ء میں ملتان سنی کانفرنس میں جمعیت علماء پاکستان کے ساتھ دینی فقہی امور کی بجا آوری کیلئے ایک غیر سیاسی تنظیم جماعت اہلسنت کا قیام عمل میں لایا گیا ، حضرت علامہ کا ظمی رحمہ اللہ کو صدر منتخب کیا گیا۔ مدارس درسِ نظامی کی اصلاح و تنظیم کے لئے آپ نے تنظیم المدارس (اہل سنت) پاکستان کی بنیاد رکھی جس کے آپ صدر تھے۔

وصال :

حضرت علامہ سید احمد سعید شاہ صاحب کاظمی رحمہ اللہ نے ٧٣ سال کی عمر میں ٢٥ رمضان المبارک ١٤٠٦ھ کو روزہ افطار کرنے کے بعد داعئ اجل کو لبیک کہا اور مالک حقیقی سے جاملے ۔ ملتان کے وسیع اسپورٹس گراؤنڈ میں نمازجنازہ ہوئی جس میں لاکھوں افراد نے شرکت کی مرکزی عیدگاہ ملتان میں مدفون ہوئے۔ آپ کا مزار پرانوار مرجع خلائق ہے ۔

✍️ابو الحسن محمد افضال حسین نقشبندی مجددی

((٢٥/رمضان المبارك ١٤٤٥ھ//٥/اپریل ٢٠٢٤ء))

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment