اقوام متحدہ میں اسرائیلی وفد کو کیوبن لڑکی کا جواب

Rate this post

اقوام متحدہ میں اسرائیلی وفد کو کیوبن لڑکی کا جواب

*اقوام متحدہ میں اسرائیلی وفد نے زبردستی حاضرین کو کھڑا کروا کر ہولوکاسٹ میں قتل ہوئے یہودیوں کیلئے ایک منٹ کی خاموشی کروائی۔ جواب میں جب کیوبا کے وفد کی باری آئی تو نمائندہ خاتون نے اپنے ملک کے مدعے چھوڑ کر یاد دلایا کہ خاموشی کیلئے کھڑا کرنے کا اختیار صرف اسپیکر چیئر کے پاس ہے، اسرائیلی وفد نے حد سے تجاوز کیا ہے اور میں اس کے جواب میں تمام حاضرین سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ بھی کھڑے ہوکر ایک منٹ کی خاموشی ان فلسطینی مسلمانوں کیلئے اختیار کریں جو اسرائیلی جارحیت و بربریت کا نشانہ بنے ہیں۔*

کیوبن خاتون کی دلیری

*کیوبن خاتون نے اسرائیلی بدمعاشی پر غصے کے اظہار کیلئے مائیک کو جیسے مروڑا اور ہیڈ فون پھینکا وہ الگ سے دل موہ لینا والا منظر ہے۔*

*مسلم امہ، فیڈرل کاسترو اور چی گویرا جیسے بہادروں کی سرزمین کیوبا اور اس خاتون کی مقروض ہے۔*

چی گویرا کے اقوال

ایک انسان کی زندگی دنیا کے سب سے امیر ترین آدمی کی جائیداد سے زیادہ قیمتی ہے

_

حقیقی انقلابی کی رہنمائی محبت کے عظیم جذبات سے ہوتی ہے۔ دنیا کے کسی بھی حصے میں کسی بھی شخص کے ساتھ ہونے والی ناانصافی کو گہرائی سے محسوس کرنے کی کوشش کریں۔ ( چے گویرا )

_

‎جہاں سوچ غلام ہو

‎وہاں زنجیروں کی ضرورت نہیں ہوتی

‎آزادی کی پہلی منزل سوچ کی آزادانہ پرواز ہے۔

_

سچائی کے بارے میں خاموش نہ رہو، اور تم دیکھو گے کہ سب تم سے کیسے نفرت کریں گے۔

_

”لوگ سوچنا پسند نہیں کرتے، کیوں کہ وہ سوچیں گے

تو نتاٸج پر پہنچیں گے اور نتاٸج ہمیشہ خوشگوار نہیں ہوتے“

_

دنیا کی سب سے جاہل ترین عوام وہی ہوئی ہے جو اپنے مشترکہ حقوق کے بجائے اپنے متفرق فرعون لیڈروں کے لئے آپس میں لڑتے ہیں

_

“آئین فقط آزاد اور خودمختار قوموں کیلئے ہوتا ہے

غلاموں کیلئے بندوق فوج اور مذہب ہوتے ہیں

_

مشہور زمانہ انقلابی “ڈاکٹر چی گویرا” کو مخالف فوج نے پکڑا تو مخبری کرنے والا چرواہے سے پوچھا کہ تم نے اس کی مخبری کیوں کی وہ تو تمہارے حق اور آزادی کے لیے سر کی بازی لگا رہا ہے-

_

چرواہے نے کہا اس لئے جناب کیوں کہ باغیوں کی گولیوں کی آواز سے میری بکریاں ڈر جاتی ہیں!

_

 بے حس قوم کا خیر خواہ ہونا بھی خود کشی ہے!!!

ہمارا ہر عمل سامراجیت کے خلاف نعرہ جنگ ہے ,,,

موت سے جہاں بھی ہمارا سامنا ہوگا ہم اس کا استقبال کریں گے

چے گویرا نے کہا تھا کہ ہمارے جنازے آہوں اور سسکیوں میں نہیں توپوں کی گھن گرج میں اٹھائے جائیں۔

_

اگر آپ ہر نا انصافی پر غصے سے کانپتے ہو تو آپ میرے ساتھی ہو⁦✌️⁩💪

_

مر جاوں مگر ضمیر کی سودا ہرگز مت کرو

             کیوں کے

یہ تمہارا سودا نہیں یہ نسلوں کا سودا ہے

💪💪💪🔥چے گویرا🔥💪💪💪💪

ظلم اتنا بھی برا نہیں۔۔۔۔!!

جتنی آپ کی خاموشی اگر آج بولنا نہیں سیکھا تو آپ کی آنے والی نسل گونگی پیدا ہوگی۔۔۔۔!!🤐

                                     چے گویرا~✍️

وسائل پر قابض لوگ غریبوں کو بتاتے ہیں کہ بھوک خدا کی آزمائش ہے۔

_

اگر تم غلط کو غلط نہیں کہ سکتے تو تم علامی کے اعلیٰ ترین درجے پر ہو ۔۔

اور اگر تم غلط کو غلط نہیں سمجھتے تو جہالت کے اعلیٰ ترین درجے پر ہو۔

آزادی کا امام چے گویرا ۔

میں گھٹنوں کے بل جینے کے بجائے اپنے پیروں پر مرنا پسند کروں گا..

_

“ موت جہاں بھی مجھے آلے، میں مسکرا کر اُس کا استقبال کروں گا “ ( چے گویرا )

افکار و نظریات کے گرد جمع لوگ عظیم مقاصد پاتے ہیں جبکہ اشخاص کے گرد لوگ منزل کے نام پہ منزل کھو دیتے ہیں…

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment