اقوال زریں | اقوال زرین اردو | مختصر اقوال زریں 30+

Rate this post

حصول برکت کے لئے اکابر اولیاء کرام کے چند اقوال زریں

قلب و روح کی صفائی کے بعد معرفت الٰہی کا حاصل ہوجانا تصوف کی روح ہے۔

 حضرت ذوالنون مصری فرماتے ہیں کہ صوفی وہ لوگ ہیں‘ جنہوں نے تمام کائنات میں صرف ﷲ تعالیٰ کو پسند کیا ہے۔

اقوال زریں

حضرت سہل بن عبد ﷲ تستری کے نزدیک صوفیہ وہ ہیں جن کی روح بشریت کی کدورت سے خالی اور تفکر سے پر ہو۔

بابا فرید الدین گنج شکر رحمتہ اللہ علیہ

 کے اقوال سے ان کی تعلیمات کا بخوبی اندازہ لگایا جا سکتا ہے ۔ آپ فرماتے ہیں کہ

1 انسانوں میں ذلیل ترین وہ ہے جو کھانے ، پینے اور پہننے میں مشغول ہے ۔

مختصر اقوال زریں
اقوال زریں اردو
اقوال زرین اردو
اقوال زریں
اقوال زرین
قول
اقوال
اقوال زریں | اقوال زرین اردو | مختصر اقوال زریں 30+

2 نفس کو اپنے مرتبہ کے لیے خوار مت کرو ۔

3 درویش فاقے سے مر جاتے ہیں لیکن لذت نفس کے لیے قرض نہیں لیتے ۔

اقوال ذرین

4 جس دل میں اللہ کا ذکر جاری رہتا ہے وہ دل زندہ ہے اور شیطانی خواہشات اس پر قابو نہیں پا سکتیں ۔

5 اطمینان چاہتے ہوتو حسد سے دور رہو ۔

6 دوسروں سے اچھاٸی کرتے ہوٸے سوچو کہ تم اپنی ذات سے اچھاٸی کر رہے ہو ۔

قرب خدا میں لوگوں سے دور رہیں اور ان کی نظروں میں مٹی اور سونا برابر ہو۔

شیخ ابو علی قزوینی فرماتے ہیں کہ تصوف اچھے اخلاق کو کہتے ہیں۔

اقوال زرین اردو

شیخ ابو الحسن نوری کے نزدیک خواہشات نفس سے آزادی‘ جوانمردی‘ رسمی تکلفات سے دستبرداری‘ سخاوت اور ترک دنیا کا نام تصوف ہے۔

حضرت شبلی فرماتے ہیں۔ صوفی وہ ہے جو دوجہاں میں ذات الٰہی کے سوا کچھ نہ دیکھے۔

شیخ عبدالواحد کا قول ہے کہ صوفی وہ ہے جو اپنی عقل کے مطابق سنت نبوی رسول ﷲصلی ﷲ علیہ وسلم پر قائم رہیں اور اپنے دل کے ساتھ اس کی طرف متوجہ رہیں اور اپنے نفس کی شرارتوں سے بچنے کے لئے مرشد کامل کا دامن تھامے رہیں۔

اقوال

حضرت جنید بغدادی فرماتے ہیں۔مخلوق کی موافقت سے دل کو پاک رکھنا‘ تمام بری صفات سے دور رہنا‘ نفسانی خواہشات سے اجتناب کرنا‘ روحانی لوگوں سے دوستی رکھنا‘ علوم حقیقی سے تعلق رکھنا‘ اعلیٰ کاموں کو اختیار کرنا‘ امت مسلمہ کی بھلائی چاہنا‘ ﷲ تعالیٰ کی کامل بندگی اور حضور رسول ﷲصلی ﷲ علیہ وسلم کی شریعت پر عمل کرنا تصوف ہے۔

عارف ربانی امام احمد رضا محدث بریلوی قدس سرہ نے ’’مقال عرفاء باعزاز شرع و علمائ‘‘ میں امام شعرانی کی کتاب طبقات الکبریٰ کے حوالے سے یہ قول نقل کیا ہے کہ ’’تصوف یہ ہے کہ دل صاف کیا جائے اور شریعت میں رسول ﷲ صلی ﷲ علیہ وسلم کی پیروی ہو۔‘‘

سیدنا غوث اعظم رضی ﷲ عنہ کے نزدیک دل کو ہر قسم کی آلائش سے پاک کرنا تصوف اور دل و جان سے صرف ﷲ تعالیٰ کا ہوجانا توحید ہے۔

حضرت خواجہ غریب نواز قدس سرہٗ کے اقوال زرین

 حضرت خواجہ معین الدین چشتی رحمۃ اللہ علیہ کا مقصد اسلام کی تبلیغ و اشاعت اور اس کے اصولوں سے لوگوں کو متعارف کرانا تھا، چناں چہ آپ کی مجالس میں تزکیہ و طہارت اور معرفت و سلوک کی باتیں ہوتی رہتی تھیں۔ آپ کے ارشادات اور اقوال کو حضرت کے جانشین خواجہ قطب الدین بختیار کاکی رحمۃ اللہ علیہ نے ’’دلیل العارفین ‘‘ کے نام سے قلم بند کر لیا تھا، یہ کتاب مختلف دینی مسائل کا سرچشمہ ہے، ذیل میں اسی کتاب سے حضرت خواجہ کے چند اقوال زرین نقل کیے جاتے ہیں۔

مختصر اقوال زریں
اقوال زریں اردو
اقوال زرین اردو
اقوال زریں
اقوال زرین
قول
اقوال
اقوال زریں | اقوال زرین اردو | مختصر اقوال زریں 30+

 ٭ نماز بندوں کے لیے خدا کی امانت ہے پس بندوں کو چاہیے کہ اس کا حق ادا کریں کہ اس میں کوئی خیانت نہ پیدا ہو۔

نماز ایک راز ہے جو بندہ اپنے پروردگار سے کہتا ہے۔

مختصر اقوال زریں
اقوال زریں اردو
اقوال زرین اردو
اقوال زریں
اقوال زرین
قول
اقوال
اقوال زریں | اقوال زرین اردو | مختصر اقوال زریں 30+

 ٭ قیامت کے روز سب سے پہلے نماز کا حساب انبیاء و اولیاء اور ہر مسلمان سے ہو گا۔ جو اس حساب سے عہدہ بر آ نہیں ہوسکے گا وہ عذابِ دوزخ کا شکار ہو گا۔

اقوال زریں اردو

 ٭ جو بھوکے کو کھانا کھلاتا ہے اللہ تعالیٰ قیامت کے دن اسکے اور جہنم کے درمیان سات پردے حائل کر دیگا۔

 ٭ اس سے بڑھ کر کوئی گناہِ کبیرہ نہیں کہ مسلمان بھائی کو بِلا وجہ ستایا جائے اس سے خدا و رسول دونوں ناراض ہوتے ہیں۔

 ٭ کون سی چیز ہے جو اللہ تعالیٰ کی قدرت میں نہیں ہے مرد کو چاہیے کہ احکامِ الٰہی بجا لانے میں کمی نہ کرے پھر جو کچھ چاہے گا مِل جائے گا۔

 ٭ قبرستان میں جان بوجھ کر کھانا یا پانی پینا گناہِ کبیرہ ہے۔ جو ایسا کرے وہ ملعون اور منافق ہے کیوں کہ قبرستان عبرت کی جگہ ہے نہ کہ جائے حرص و ہَوا۔

مختصر اقوال زریں
اقوال زریں اردو
اقوال زرین اردو
اقوال زریں
اقوال زرین
قول
اقوال
اقوال زریں | اقوال زرین اردو | مختصر اقوال زریں 30+

 ٭ جس نے جھوٹی قسم کھائی گویا اس نے اپنے خاندان کو ویران کر دیا اس گھر سے برکت اٹھا لی جاتی ہے۔

 ٭ گناہ تم کو اتنا نقصان نہیں پہنچا سکتا جتنا مسلمان بھائی کو ذلیل و رسو ا کرنا۔

مختصر اقوال زریں

 ٭ جس نے خدا کو پہچان لیا اگر و ہ خلق سے دور نہ بھاگے تو سمجھ لو کہ اس میں کوئی نعمت نہیں۔

 ٭ عارف وہ شخص ہوتا ہے جو کچھ اس کے اندر ہو اسے دل سے نکال دے تاکہ اپنے دوست کی طرح یگانہ ہو جائے پھر اللہ تعالیٰ اس پر کسی چیز کو مخفی نہ رکھے گا اور وہ دونوں جہاں سے بے نیاز ہو جائے گا۔

 ٭ اگر قیامت کے دن کوئی چیز جنت میں لے جائے گی تو وہ زہد ہے نہ کہ علم۔

 ٭ جو شخص عشقِ الٰہی کی راہ میں قدم رکھتا ہے اس کا نام و نشان نہیں ملتا۔

 ٭ اہلِ عرفان یادِ الٰہی کے علاوہ کوئی اور بات اپنی زبان سے نہیں نکالتے اور اللہ کے خیال کے سوا دل میں کسی دوسرے کا خیال نہیں لاتے۔

 ٭ اگر کسی شخص میں تین خصلتیں پائی جائیں تو سمجھ لو کہ اللہ تعالیٰ اسے دوست رکھتا ہے (۱) سخاوت (۲) شفقت (۳) تواضع (عاجزی)

مختصر اقوال زریں
اقوال زریں اردو
اقوال زرین اردو
اقوال زریں
اقوال زرین
قول
اقوال
اقوال زریں | اقوال زرین اردو | مختصر اقوال زریں 30+

سخاوت دریا جیسی، شفقت آفتاب کی طرح اور تواضع زمین کی مانند۔

 ٭ نیکوں کی صحبت نیک کام سے بہتر ہے اور بروں کی صحبت برے کام سے بری ہے۔

 ٭ دنیا میں تین افراد بہترین کہلانے کے مستحق ہیں (۱) عالم جو اپنے علم سے بات کہے(۲) جو لالچ نہ رکھے (۳) وہ عارف جو ہمیشہ دوست کی تعریف و توصیف کرتا رہے۔

 ٭ حق شناسی کی علامت لوگوں سے راہِ فرار اختیار کرنا اور معرفت میں خاموشی اختیار کرنا ہے۔

 ٭ عارف سورج کی طرح ہوتا ہے جو سارے جہان کو روشنی بخشتا ہے جس کی روشنی سے کوئی چیز خالی نہیں رہتی۔

 ٭ توکل یہ ہے کہ اللہ کے علاوہ کسی اور پر توکل نہ ہو اور نہ کسی چیز کی طرف توجہ کی جائے۔

 ٭ سچی توبہ کے لیے تین باتیں ضروری ہیں (۱) کم کھانا (۲) کم سونا(۳) کم بولنا، پہلے سے خوفِ خدا، دوسرے اور تیسرے سے محبتِ الٰہی پیدا ہوتی ہے۔

مختصر اقوال زریں
اقوال زریں اردو
اقوال زرین اردو
اقوال زریں
اقوال زرین
قول
اقوال
اقوال زریں | اقوال زرین اردو | مختصر اقوال زریں 30+

 ٭ اہلِ طریقت کے لیے دس شرطیں لازم ہیں۔ (۱) طلبِ حق (۲) طلبِ مرشد (۳) ادب (۴) رضا (۵) محبت اور ترکِ فضول (۶) تقوا (۷) شریعت پر استقامت (۸) کم کھانا کم سونا کم بولنا (۹) خلق سے دوری اور تنہائی اختیار کرنا(۱۰) روزہ و نماز کی ہر حال میں پابندی۔

 ٭ پانچ چیزوں کو دیکھنا عبادت ہے۔ (۱) اپنے والدین کے چہرے کو دیکھنا حدیث میں ہے، جو فرزند اپنے والدین کا چہر ہ دیکھتا ہے اس کے نامۂ اعمال میں حج کا ثواب لکھا جاتا ہے(۲) کلامِ مجید کا دیکھنا (۳) کسی عالمِ با عمل کا چہرہ عزت و احترام سے دیکھنا (۴) خانۂ کعبہ کے دروازے کی زیارت اور کعبہ شریف کو دیکھنا (۵) اپنے پیر و مرشد کے چہرے کو دیکھنا اور ان کی خدمت کرنا۔

اللہ کریم ہمیں حضرت خواجہ غریب نواز قدس سرہٗ کی تعلیمات پر عمل پیرا ہونے کی توفیق عطا فرمائے، آمین بجاہ النبی الامین الاشرف الافضل النجیب صلی اللّٰہ تعالیٰ علیہ وآلہٖ وصحبہ وبارک وسلم

(مشاہد رضوی کی کتاب “خواجہ معین الدین چشتی سے ماخوذ)

I am Muhammad Adnan Khan Chunda. I am student(Talib e Ilm) Of Jamia Muhammadiya Hanfiya Sulamani Near Jatta Adda Naivela. I love To Teach You Islamic Information like Masail,Hadees and Quotes of Bazurgane din.

Leave a comment